حوروں والا ٹیکہ

منصور احمد
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ملک معاشی بحران کا شکار ہے،کیا آپ کو معلوم ہے؟
نہیں تو ملک میں سب کچھ ٹھیک چل رہا ہے۔
بھائی ملک میں مہنگائی عروج پر ہے کیا آپ کو پتہ ہے؟
کہاں بھائی؟ خیر مہنگائی کا تو معلوم نہیں عروج آجکل واقعی عروج پر ہے سنا ہے نیویارک میں بیسویں فلور پررہ رہی ہے اللہ اس کو مزید عروج عطا فرمائے۔
کہو آمین۔
لو کہہ دیا آمین
گڈ کسی کی ترقی سے جلا مت کرو حسد مت کرو ورنہ ساری نیکیاں ضائع ہوجائیں گی،سمجھ گئے؟
جی میں سمجھ گیا۔
ویسے تم کیا کہہ رہے تھے ؟ْ ملک میں کیا ہوا ہے؟
ملک کو چھوڑیں یہ بتائیں آپ کو کیا ہوا ہے؟میں مہنگائی کی بات کررہا ہوں آپ عروج کی باتیں لے کر آگئے ویسے یہ عروج ہے کون؟
ہائے ظالم کیا یاد کرادیا مجھے خود نہیں معلوم یہ عروج کون ہے ؟
کیا ؟آپ کو آخر ہوا کیا ہے کیا آپ بھی نشہ کرنے لگے؟
اللہ نہ کرے نشہ اور میں۔۔ توبہ توبہ استغفار۔
پھر اتنی بہکی بہکی باتیں کیوٓں کررہے ہیں ؟
پتہ نہیں کیا ہوا ہے جب سے اسپتال سے ٹیکہ لگواکر آیا ہوں دنیا بدلی بدلی لگ رہی ہے، ہر نام کسی لڑکی کا نام لگ رہا ہے اور ہرلڑکی حور لگ رہی ہے۔
ہائے کہیں آپ نے اسپتال سے حوروں والا ٹیکہ تو نہیں لگوا لیا؟
پتہ نہیں میں نے تو بس یہ کہا تھا اوپر سے گرا گیا ہوں کمر میں درد ہے ۔۔جب میں نے کہا میں گرا ہواتھا اسپتال والوں نے معنی خیز نظروں سے مجھے دیکھا اور ایک ٹیکہ لگادیا۔۔ نجانے کون ساٹیکہ ہے بھائی؟ہم نے تو کبھی نہیں سنا ؟ویسے کچھ بھی ہو تاثیر بہت ہے اس ٹیکے کی؟
مطلب آپ نے کہا گرا ہوا تھا ؟اس کا مطلب ہے یہ ٹیکہ صرف گرے ہوئے لوگوں کو لگتا ہے؟
معلوم نہیں یار۔۔۔
بھائی میں بھی گیا تھا اسپتال حوروں والا ٹیکہ لگوانے ۔۔۔کم بختوں نے مہنگائی کا ٹیکہ لگادیا
ارے ارے یہ تو تمہارے ساتھ ظلم کیا انہوں نے ۔۔۔
جی ہاں جبھی مجھے ملک بھر میں مہنگائی کا جن آزاد نظر آرہا ہے جو غریبوں کو نگل رہا ہے۔
ہائے بہت ہی ظالم ہیں یہ تو ۔۔مجھے حوریں اور تم کو جن ۔۔۔وہ بھی مہنگائی کا ۔۔سن کر ہی خوف آرہا ہے ۔
آگے تو سنیے ۔۔میں اس پہلے بھی گیا تھا میں کہا کوئی اچھا ساانجکشن لگادیں جس سے مجھے پاکستان روشن روشن نظر آئے ۔۔کمینوں نے بجلی کا ٹیکہ لگادیا ۔۔بل دیکھ کر مجھے چارسو چالیس ولٹ کا کرنٹ لگ گیا ۔۔آفٹر شاکس اب تک جاری ہیں۔
اوئے ہوئے۔۔ برا کیا بہت برا پھر کیا ہوا ؟
ارے بھائی ابھی بجلی کے غم سے باہر بھی نہیں نکلا تھا کہ گیس کا انجکشن لگادیا ۔۔۔بھلا بتاؤ چولہا جلتا نہیں گیس مہنگی کردی۔۔ وہ اتنی مہنگی کے پیٹ میں گیس بننے لگ گئی ہے ۔۔مسئلہ یہ ہے کہ نکالو تو بھی مسئلہ نہ نکالو تو بھی مسئلہ۔ کروں تو کیا کروں؟
اٹھو چلو باہر جاؤ یہاں گیس مت نکال دینا ۔۔۔چلو جاؤ شاباش
ارے نہیں اب اتنی بری حالت بھی نہیں خیر میں آپ کو اپنی داستان غم سنا رہا تھا مجھے ظالموں نے کتنے ٹیکے لگائے
اچھا چلو بتاؤ میرے عزیز میں تھمارے دکھ میں برابر کا شریک ہوں
شکر ہے آپ کو میرا خیال تو آیا مجھے بدبختوں نے پیٹرول کا ٹیکہ بھی لگایا ۔۔۔وہ ٹیکہ لگنا تھا میری زندگی ہی رک گئی۔۔گیس مل نہیں رہی خود ہی بنارہا ہوں جو اتنی نہیں کہ گاڑی چل سکے۔
بہت ظلم ہوا میرے عزیز تھہارے ساتھ کہیں میں شدت غم سے مرنہ جاؤں، اپنی داستان غم جلدی ختم کرو ۔۔۔۔
شکریہ بھائی ۔۔۔مجھے ان لوگوں نے آٹے کا چینی کا،ٹماٹروں کا سبزیوں کا گوشت حد تو یہ ہے کہ شرح سود کا ٹیکہ بھی لگادیا جس سے میرا بجٹ ایسا فیل ہوا جیسے میں دوسری جماعت میں چار بار ،پانچویں کلاس تین بار اور میٹرک میں بار بار فیل ہوا تھا۔
ارے ارے تم تو بہت ہی پڑھے لکھے ہو۔۔مجھے نہیں معلوم تھا کہ تم کو پڑھائی کا اتنا زیادہ شوق ہے ایک کلاس میں تین تین سال لگادیے، گڈ کیا بات ہے تمہاری۔۔
یہی تو ہمارا فن ہے بھائی کبھی غرور نہیں کیا ۔۔۔خیر میں بتا رہا تھا اس ایک حوروں والے انجکشن نے مجھے کتنا رسوا کرایا۔ مجھے ہی نہیں پوری قوم کو ظالموں نے یہ ٹیکے لگائے۔ عوام کے لیے صرف مہنگائی،پیٹرول،بجلی،گیس ،آٹے چینی کے ٹیکے اور صاحب کے لیے حوروں والے ٹیکے کیا یہ کھلا تضاد نہیں ہے؟
ارے میاں ہے تو مگر کیا کریں نصیب اپنا اپنا ۔۔۔میں نے کہا نا حوروں والے ٹیکے کے لیے بندے کا گرا پڑا ہونا ضروری ہے لیکن تم تو بہت پڑھے لکھے ہو، تم کو اور اس قوم کو حوروں والا ٹیکہ نہیں لگ سکتا ۔۔۔اس کے لیے گرنا پڑتا ہے ۔۔جو تمہارے بس کی بات نہیں، تم نہیں کرسکتے بس صبر کرو۔
باقی رہے نام اللہ کا ۔