سانحہ گیاری،فوج کی عظیم قربانی کو چھ برس بیت گئے

مادر وطن کے لیے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے سپوتوں کو رخصت ہوئے چھ برس بیت گئے ہیں.

آج کے ہی دن گیاری سیکٹر میں دفاع وطن کے محاذ پر جانے والے، سیاچن پر دشمن کے قبضے کو روکنے والے ایک سو چالیس سپاہی اور سول کنٹریکٹرز برفانی تودے تلے دب گئے تھے.

اس عظیم قومی سانحے کے بعد فوری پر امدادی آپریشن کا آغاز کیا گیا.

راولپنڈی سے ایک سو پچاس افراد کی نفری اور ہیوی مشینری ائر لفٹ کرکے گیاری پہنچائی گئی.

امدادی ٹیم نے دن رات ایک کردیئے.

انتیس مئی دو ہزار بارہ کو اعلان کیا گیا کہ سانحہ گیاری میں تمام ایک سو انتیس دفاع وطن کے محافظ اور ان کے گیارہ سول کانٹریکٹر ساتھی وطن پر نثار ہوگئے ہیں.

پاکستانی فوج کی تاریخ دفاع وطن کے لیے لہو سے عبارت ہے اور سانحہ گیاری اس کا ایک روشن ترین باب ہے.