کاش کی کثیر کاشت

منصور احمد

کاش بھی کیا لفظ ہے ۔۔۔کاش یوں ہوتا تو یوں ہوتا ۔۔کاش یہ کرتا تو وہ ہوتا ۔۔۔کاش وہ کرتا تو یہ ہوتا ۔۔لیکن یہ کاش ہمیشہ لیٹ کیوں ہوجاتا ہے یعنی سانپ نکل گیا اور ہم لکیر پیٹ رہے ہیں ۔۔کاش ہم نے سانپ کو نکل جانے ہی نہ دیا ہوتا ۔۔خیر جو ہوا سو ہوا مگر یہ ہوا کیوں ؟ کاش یہ نہ ہوا ہوتا ۔۔

تم ہوتیں تو یوں ہوتا ۔۔۔تم نہیں ہو تو یوں ہوگیا ارے بھائی ہوا کیا؟ جواب ملتا ہے کاش یہ نہ ہوتا ۔۔کاش میں صحافی نہ ہوتا ۔کاش کوئی ڈھنگ کا کام کرلیتا ۔۔کاش۔۔لیکن شاید نصیب ہی خراب تھے یا کہتے ہیں نا ماں کی بدعاہے کہ میں صحافت کے پیشے سے وابستہ ہوگیا ۔۔۔

کہتے ہیں پیٹ سب کے ساتھ لگا ہوتا ہے سوائے صحافیوں کے ۔ کام لیتے جاؤ دام نہ دو ۔۔ آج کل صحافت کا معیار کسی غلام کی طرح ہوگیا ۔۔مالکوں کے کہنے پر یہ غلام ناچتا ہے ۔۔۔مالکان کے کہنے پر خبریں چلاتا ہے مالکان کے کہنے پر خبریں روکتا ہے ۔۔جو مالکان کہیں گے صحافی وہی کرتا ہے.

پیسہ ملے یا نہ ملے لیکن پھر بھی یہ حکم کا غلام ناچے گا ۔۔کاش میں صحافی نہ ہوتا ۔۔کاش میرے مالک تو نے مجھے کسی اور پیشے سے وابستہ کیا ہوتا ۔۔کاش میں حکم کا غلام نہ ہوتا ۔۔کاش کوئی ایسا کام کرتا جس کو کرکے دل مطمئن ہوتا ۔۔کاش اس اذیت بھری نوکری سے مجھے جلد ازجلد نجات مل جائے ۔۔

لفط کاش کی اتنی ساری مثالیں شاید ہی آپ کو سننے کو ملیں ۔۔لیکن میں نے کاش کی کتنی کاشت کرلی اس کا تو آپ نے اندازہ لگالیا ہوگا ۔۔لیکن جب اس کاشت کی کٹائی کا وقت آیا تو میرے منہ سے بے ساختہ نکلا۔۔کاش میں یہ سب نہ لکھتا ۔۔۔لیکن اب تو تیر کمان سے نکل گیا

تیر سے یاد آیا تیر والے آجکل خوب بدلے نکال رہے کراچی والوں سے ۔۔کاروبار بند ۔۔ڈبل سواری پر پابندی لگادی ۔۔خواتین کے بیٹھنے پر بھی پابندی ،صحافی کے بیٹھنے پر بھی پابندی ۔۔پولیس کے بیٹھنے پر بھی پابندی لیکن اس سے آگے جانے کی شاید تیروالوں میں ہمت نہیں ۔۔خیر تیروالوں کو شاید معلوم نہیں جہاں کراچی میں خواتین کو ان کی وہ پولیس جو خود ڈبل گھوم رہی ہے لیکن خواتین کے بیٹھنے پر خواتین کو خوب بے عزت کررہی یبں، کاش تیر والے سندھ کے حکمران نہ ہوتے ؟ ۔۔۔کاش مراد علی شاہ سندھ کے کپتان نہ ہوتے ۔۔۔۔لیجئے اس میں بھی کاش کا لفظ آہی گیا

کپتان کے ذکر پر میں کیسے خاموش رہ سکتا ہو،،،کاش پاکستان نائنٹی ٹو کا ورلڈ کپ نہ جیتا ہوتا ۔۔کاش دوہزار اٹھارہ میں انتخابات نہ ہوتے ۔۔ کاش کل کا کپتان آج کا وزیراعظم نہ ہوتا ۔۔کاش صرف اور صرف کاش اس سے آگے ہمارا بس نہیں چلتا ۔۔کاش اس سے آگے بھی ہمارا بس چلتا تو یہ سب کچھ ہمارے ساتھ نہ ہوتا مگر جناب یہ سب ہوگیا ،،،وزیراعظم عمران خان بن ہی گئے باقی کیا کہوں میں ۔

کاش میں نے اتنی بکواس نہ کی ہوتی۔۔کاش میرا دماغ اتنا فضول نہ چلتا ۔۔تو شاید آدمی ہم بھی ہوتے کام کے مگر کیا کریں ہم تو ٹھہرے ہی فضول آدمی ۔۔اللہ ہمیں ہدایت دے ۔۔اور اتنی کاش کی کاشت نہ کرنے کی توفیق عطافرمائے ۔۔باقی رہے نام اللہ کا