کام ہی کام آتا ہے؟

منصور احمد
…………………….
کہیں یہ لائن میں نے پڑھی کہ دوستوں کام ہی کام آتا ہے تو ذہن میں بس ایک ہی شعر آیا ۔۔۔
مکتب عشق کا دستور نرالا دیکھا
اس کو چھٹی نہ ملی جس کو سبق یاد ہوا
ویسے تو مجھے شیر چیتے میں کبھی دلچسپی نہیں رہی ہے لیکن نہ جانے کی کیوں یہ لائن پڑھ کر یہ شعر یاد آگیا۔
یہ لائن میرے دماغ میں ایسی گھسی کے نکلنے کا نام نہیں لے رہی ۔۔اس دوران میرا ایک دوست آگیا ۔۔

دوست سے حال احوال معلوم کیا ۔۔۔کورونا کے باعث ہوٹل پر بیٹھ کر چائے پینا تو ایک خواب بن گیا، تو سوچا کہیں بیٹھ کر گپ شپ ہوجائے۔ باتوں باتوں میں نے یہ جملہ مارا کہ بھائی کام ہی کام آتا ہے.

میرے دوست نے مجھے ایسے گھورا جیسے میں نے اسکو کوئی گالی دیدی۔
کیا ہوگیا بھائی کیوں ایسے کیوں دیکھ رہا ہے جیسے میں نے تیری کھوتی کو ہاتھ لگادیا ہو
ابے تو کھوتی کوگولی مار دے مجھے پروا نہیں لیکن یہ نہ بول کام ہی کام آتا ہے؟
پھر کیا کہوں تم ہی سمجھا دو…
دوست نے مجھے گھورا اور کہا تم اپنے ادارے میں کب سے کام کررہے ہو؟
میں حیران ہوا یہ کیا سوال ہے بھائی ؟
بتاؤ نا! کب سے کام کررہے ہو؟؟؟
میں کہا نو سال ہوگئے ہیں لیکن اس سے میرے سوال کا کیا تعلق ؟
اس نے کہا آفس جاتے ہو کام کرتے ہو بتاؤ تم کو کتنا کام آتا ہے ؟
میں نے کہا بھائی جتنا کرسکتا ہوں اتنا تو آتا ہے ورنہ اپنے بڑوں سے پوچھ لیتا ہوں
یعنی تم کو اچھا خاصا کام آتا ہے۔
میں نے کہا ہاں جتنا آتا ہے اتنا تو کرہی لیتا ہوں۔
تو مجھے بتاؤ تمہارا کام تمہارے کتنا کام آیا۔
اب میں نے دوست کو گھورا اور کہا ابے کام آتا ہے جب ہی تو ادارے میں کام کررہا ہوں اگر کام نہ آتا تو ادارے والے مجھے گھر نہیں بھیج دیتے؟
ٹھیک کام کرنے سے آہی جاتا ہے لیکن اصل چیز جو کام آتی ہے وہ ہیں آپ کے تعلقات۔ کام ہی کام نہیں آتا میرے بھائی تعلقات کام آتے ہیں.
میں نے غصے سے دوست کو دیکھا اور کہا یار کیوں موڈ خرا ب کررہا ہے۔ چل کوئی اور بات کر
دوست نے مسکراتے ہوئے کہا کونسی بات کروں۔ جہاں تک موڈ خراب کرنے کی بات ہے تو شروع تو تم نے ہی کیا تھا
اب مسکرانے کی باری میری تھی۔ میں کہا واہ میرے ڈیڑھ ہوشیار دوست تمہاری زبان بھی چل پڑی
دوست نے کہا ہاں بھائی صحبت کا اثر ہے وہ کہتے ہیں نا خربوزے کو دیکھ کر تربوز رنگ بدل لیتا ہے
ابے گدھے خربوزے کودیکھ کر کون سا تربوز رنگ بدلتا ہے؟
دوست نے ایک قہقہ لگایا اور کہا اب آیا ہے میرا دوست اپنے اصل رنگ میں ۔
خیر بات آئی گئی ہوگئی دوست بھی کچھ دیر اور بیٹھ کر اپنی جاب پر چلا گیا ۔۔
یہاں یہ بات آپ کو بتاتا چلوں میرا دوست بھی میری طرح ایک صحافی ہے بس فرق یہ ہے وہ رجسڑڈ صحافی ہے اور میں نام کا
گھر آکر میں نے ابن صفی کی عمران سیریز اٹھائی اور پڑھنا شروع کردی ۔۔۔لیکن دل نہیں لگا ۔۔تو ایک طرف رکھ کر ٹی وی دیکھنے لگا
ٹی وی پر فواد چوہدری کے وائس اورامریکا کو ئیے گئے انٹرویو کا شور تھا ۔۔۔اس میں ہی ایک خبر یہ بھی چلی کہ پیراٹوپر آگئے ہیں جنہوں نے پارٹی پر قبضہ کیا ہوا ہے.
پیراٹروپر!!!! میرے دماغ میں یہ چیز بھی اٹک گئی۔اوپرسے لوگ کیسے آجاتے ہیں اور عہدے بھی بڑے لے لیتے ہیں ۔۔۔
معاون خصوصی کی ایک فوج ملک پر سوار ہے یہی تو ہیں پیراٹروپر۔ جو اوپر آئے اور اعلی عہدوں پر لگ گئے.
پھر مجھے اپنے دوست کی بات یاد آگئی بھائی کام نہیں تعلقات کام آتے ہیں .
دماغ کو سکون مل گیا ایک پھانس جو دماغ میں چبھ رہی تھی نکل آئی. اپنے آگے پیچھے نظر ڈالی تو بہت سارے پیراٹروپر نظر آگئے .
دوست نے بھی شاید اسی طرف اشارہ کیا تو میرے بھائیو! کام تو کام آتا ہی ہے لیکن کام کوئی بھی ہو بندے سیکھ ہی جاتا ہے لیکن اصل چیز تعلقات ہیں÷
جو کسی بھی مشکل میں آپ کو بڑے عہدوں پر لگادیتا ہے باقی کام تو بندہ سیکھ ہی جاتا ہے ۔۔باقی رہے نام اللہ کا

میں بھی بہت عجیب ہوں اتنا عجیب ہوں کہ بس
خود کو تباہ کر لیا اور ملال بھی نہیں